December Kis Liye Aakhir Hamesha Khas Lagta Hai | Urdu Poetry




Woh darjan bhar mahinon se,
Zara mumtaaz lagta hai,
December kis liye aakhir
hamesha khaas lagta hai,
Bohat sehmi hui subhein,
Udaasi se bhari shaamein,
Dopehrein royi royi si,
Woh raatein khoyi khoyi si,
Garam dabeez shaalon ka,
Woh kam roshan ujaalon ka,
Kabhi guzre hawalon ka,
Kabhi mushkil sawalon ka,
Bicharr jaane ki mayoosi,
Milan ki aas lagta hai,
December iss liye shahid
hamesha khaas lagta hai..

Poet: Unknown
Voice: Imran Sherazi

وہ درجن بھر مہینوں سے
سدا ممتاز لگتا ہے
دسمبر کس لئے آخر
ہمیشہ خاص لگتا ہے
بہت سہمی ہوئی صبحیں
اداسی سے بھری ہوئی شامیں
دوپہریں روئی روئی سی
وہ راتیں کھوئی کھوئی سی
گرم دبیز شالوں کا
وہ کم روشن اجالوں کا
کبھی گزرے حوالوں کا
کبھی مشکل سوالوں کا
بچھڑ جانے کی مایوسی
ملن کی آس لگتا ہے
دسمبر اس لیے شاید
ہمیشہ خاص لگتا ہے

شاعر: نامعلوم
آواز: عمران شیرازی


No comments :

No comments :

Post a Comment