Mein Chhoti Si Ik Bachi Thi | Mothers Day Specical Urdu/ Hindi Poetry | Bachon KI Dunya




Main choti si ik bachi thi
teri ungli tham kai chalti thi
tu door nazar se hoti thi
main aansoo ansoo roti thi
khabon ka ik roshan basta
tu roz mujhe pehnati thi
Jab darti thi main ratun ko
tu apne sath sulati thi
Maan tu ne kitne barson tak
is phool ko seincha hathon se
Jeevan kai gehre bheydon ko
main samjhi teri batoon se
Mein teree yaad kai takiye per
ab bhi rat ko sotee hoon
Maan me choti see ik bachi
teri yad mein ab bhi roti hoon

Poet: Unknown
Voice: Imran Sherazi

میں چھوٹی سی اک بچی تھی
تیرا انگلی تھام کہ چلتی تھی
تو دور نظر سے ہوتی تھی
میں آنسو آنسو روتی تھی
خوابوں کا اک روشن بستہ
تو روز مجھے پہناتی تھی
جب ڈرتی تھی میں راتوں کو
تو اپنے ساتھ سلاتی تھی
ماں تو نے کتنے برسوں تک
اس پھول کو سینچا ہاتھوں سے
جیون کے گہرے بھیدوں کو
میں سمجھی تیری باتوں سے
میں تیری یاد ک تکیے پر
اب بھی رات کو سوتی ہوں
ماں میں چھوٹی سی اک بچی
تیری یاد میں اب تک روتی ہوں

شاعر: نامعلوم
آواز: عمران شیرازی

No comments :

No comments :

Post a Comment