Mein Nazar Se Pee Raha Hoon | Urdu Poetry by Anwar Mirzapuri




main nazar se pee raha hoon yeh samaan badal na jaaye
na jhukao tum nigaahein kahin raat dhal na jaaye

mere ashk bhi hain is mein ye sharaab ubal na jaaye
mera jaam chhoone vaalay tera haath jal na jaaye

meri zindagi ke maalik mere dil pe haath rakhana
tere aane ki khushi mein mera dam nikal na jaaye

abhi raat kuchh hai baaqi na utha naqaab saaqi
tera rind girate girate kahin phir sambhal na jaaye

mujhe phoonkne se pehalay mera dil nikaal lena
ye kisi ki hai amaanat kahin saath jal na jaaye

main bana to loon nasheman kisi shaaKh-e-gulistaaN pe
kahin saath aashiyaan ke ye chaman bhi jal na jaaye

isi khauf se nasheman na bana saka main ‘Anwar’
ke nighaah-e-ahl-e-gulshan kahin phir badal na jaaye

Poet: Anwar Mirzapuri
Voice: Imran Sherazi

میں نظر سے پی رہا ہوںیہ سماں بدل نہ جائے
نہ جھکاو تم نگاہیں کہیں کہیں رات ڈھل نہ جائے

میرے اشک بھی ہیں اس میں یہ شراب ابل نہ جائے
میرا جام چھونے والے میرا ہاتھ جل نہ جائے

میری زندگی کے مالک میرے دل پہ ہاتھ رکھنا
تیرے آنے کی خوشی میں میرا دم نکل نہ جائے

ابھی رات کچھ ہے باقی نہ اٹھا نقاب ساقی
تیرا رند گرتے گرتے کہیں پھر سنبھل نہ جائے

مجھے پھونکنے سے پہلے میرا دل نکال لینا
یہ کسی کی ہے امانت کہیں ساتھ جل نہ جائے

میں بنا تو لوں نشیمن کسی شاخ گلستاں پہ
کہیں ساتھ آشیاں کے یہ چمن بھی جل نہ جائے

اسی خوف سے نشیمن نہ بنا سکا میں انور
کہ نگاہ اہل گلشن کہیں پھر بدل نہ جائے

شاعر: انور مرزا پوری
آواز: عمران شیرازی



No comments :

No comments :

Post a Comment