Munir Niazi Poetry | Ranj e Firaq Yaar Mein Ruswa Nahin Hua | Urdu Poetry with Lyrics




Ranj-e-Firaq Yaar Mein Ruswa Nahin Hua
Itna mein chup hua ke tamasha nahin hua

aisa safar hai jis mein koi hamsafar nahin
rasta hai iss tarah ka ke dekha nahin hua

mushkil hua hai rehna humein is diyar mein
barson yahan rahay hein yeh apna nahin hua

woh kaam shah-e-shehar se ya shehar se hua
jo kaam bhi hua yahan acha nahin hua

milna tha aik baar usay phir kahin Munir
aisa mein chahta tha par aisa nahin hua

Poet: Munir Niazi
Voice: Imran Sherazi

آر جے عمران شیرازی کی آواز میں اردو شاعری

رنج فراق یار میں رسوا نہیں ہوا
اتنا میں چپ ہوا کہ تماشہ نہیں ہوا

ایسا سفر ہے جس میں کوئی ہمسفر نہیں
رستہ ہے اس طرح کا کہ دیکھا نہیں ہوا

مشکل ہوا ہے رہنا ہمیں اس دیار میں
برسوں یہاں رہے ہیں یہ اپنا نہیں ہوا

وہ کام شاہ شہر سے یا شہر سے ہوا
جو کام بھی ہوا یہاں اچھا نہیں ہوا

ملنا تھا ایک بار اسے پھر کہیں منیر
ایسا میں چاہتا تھا پر ایسا نہیں ہوا

شاعر: منیر نیازی
آواز: عمران شیرازی


No comments :

No comments :

Post a Comment